پاڑہ چنار اور کوئٹہ دھماکوں سے پاکستان دو بڑے اہداف حاصل کرنا چاہتے ہیں

۱:- آج سے تقریباً ایک مہینہ پہلے قبائلی وفد افغانستان جلال آباد گیا تھا اورادھر پشتون قبائل کیساتھ ایک جرگہ منعقد کیا گیا جرگے میں اہم موضوع دونوں طرف کے پشتونوں کا باہمی اتحاد تھا تاکہ کس طرح پشتون دوبارہ سے اکھٹے ہوجائے اور انگریزوں کی کھینچی ہوئی فرضی ڈیورنڈ لائن سے کو مٹھائی جاسکے ؟

اس جرگے میں خیبر ایجنسی کے قبائل نے پاکستانی فوج کو مخاطب کرکے واضح الفاظ میں بتا دیا کہ اس نام نہاد سرحد پر ہمیں کسی بھی صورت باڑ لگانا تسلیم نہیں چاہے آپ کچھ بھی کرلیں ،

Video link of the Tribals jirga

اس دھماکوں کے بعد پاکستان افغانستان پر الزام لگائے گا اور اپنی پرانے مصنوعی بیانیے سے اپنے میڈیا کے ذریعے کام لینگے کے پاڑہ چنار اور کوئٹہ میں دہشتگردی کے واقعات کے پیچھے افغانستان ہے اور آسی طرح ڈیورنڈ لائن پر باڑ لگانے کیلئے راہ ہموار کرینگے ۔

۲:- پچھلے چند ہفتوں میں سوشل میڈیا نے ضلع دیر اور لورہ لائی کے طالبان کیمپس اور چندہ مہم نے میڈیا میں کھلبلی مچائی ہے اس سے پاکستانی آرمی کے راز افشا ہوگئے ہیں وہ راز جو طالبان اور دیگر کالعدم تنظیموں کی پشت پناہی ہے ان سے پردہ اٹھ گیا ہے ۔اب کوئٹہ کے دھماکے کا الزام را پر لگا کر جیسا کے ابھی ابھی بلوچستان کے وزیر داخلہ نے اس حملے کا الزام ہندوستان ایجنسی را پر لگا دیا ہے اس الزام سے بلوچستان لورہ لائی میں طالبان کے سرگرمیوں پر پردہ ڈالیں گے ۔

Taliban activities in Balochistan link

https://twitter.com/pakhtunr/status/869987159159197697

One clap, two clap, three clap, forty?

By clapping more or less, you can signal to us which stories really stand out.